meri premika

Post Reply
User avatar
rajsharma
Super member
Posts: 14434
Joined: 10 Oct 2014 07:07

meri premika

Post by rajsharma »

meri premika

م میری پنانی گرل فرینڈ میں اور میری گرل فرینڈ نا کہ ہم نے ایک سال سے ساتھ ہیں، یہ لڑکی ہے ہے میں نے زندگی میں ہی بار چودا اس کے ساتھ بھی ایسا پہلی بارہوا۔ پہلی بار کی یادیں تارے دل و دماغ میں بسی ہوئی ہیں اسی لئے ہم دونوں نے سوچا کہ آپ سے Share کی جائیں ۔ امید ہے آپ کو یہ کہانی بہت اچھی لگے گی۔
میری گرل فرینڈ ناد یکی برتھ ڈے ھی تو اس لئے میں اسے اپنے فلیٹ پر لے گیا، اس بہانے سے کہ ہم اس کی برتھرے سلیم مت کریں گے اور وہ میرا یا فلیٹ بھی دیکھ لے گیا۔ اس نے چاکلیٹ رنگ کا سوٹ پہن رکھا تھا، چاکلیٹ رنگ کی تیپ سکے اور اپنے خوبصورت پیروں میں انہیں پہن رکھی تھیں میں نے اسے کہا تھا کہ وہ جب بھی میرے ساتھ ہو پالیں پہنا کرے) ۔ میں نے پہلے ہی کیک منگوارکھا تھا، تھے اور گندے فرش پر گئے تھے تا کہ ہم آسانی سے بھی ہیں اور اگر لینا پڑے تو لیے بھی ہیں ۔ میں نے اسے انانیا فلیٹ دکھایا اور اس نے اسے کافی پسند کیا، پھر میں اسے اپنے ساتھ بیڈ روم لے گیا جہاں میں نے تمام بندوبست کر رکھا تھا۔ ہم دونوں جوتے اتار کر گدے پر منے سامنے بیٹھ گئے ۔ میں نے اس سے کیک کٹوایا اور پھر ہم دونو
نے چین ک ے لئے اس کے بعد میں نے اپنی جیب میں سے چاندی کی بالوں کا ایک اور سیٹ نکالا ۔ میں نے اس کی ٹانگیں اپنی ٹانگوں کے درمیان تھیں، پہلی والی ان میں اتار دیں اور اسے نیپال میں پہنادیں ۔ وہ بہت خوش نظر آ رہی تھی تب میں نے اس
کیانی بالوں کو چوما اور اس کی ٹانگوں کو پیروں کے اندر سے ہی چھوا۔ اب میں نے اس کی مائیں اپنی ٹانگوں سے بات میں اور دوباره استند اس کے ساتھ بیٹھ گیا۔ میں نے اپنا بایاں بازواس کے کاندھوں کے گرور تھا اور اسے اپنے نزدیک لا کر اس کے ہونون پرایک بھر پور kiss کیا۔ جلد ہی میں اس کی زبان چوس رہا تھا، اور اپنی زبان اس کے منہ میں بہت اندرتک اتار چکا تھا اور میرا بایاں ہاتھ اس کے ممے مسل رہا تھا۔ جلد ہی میں نے اسے گدے پلٹا دیا مگر ہمارے ہونٹ جدا نہیں ہوئے ہم مسلسل kiss کرتے رہی اور ایک دوسرے کے جسموں سے کھیلتے رہے۔ چینی
و پولیٹی میں اپنے ہونٹ اس کے کانوں کی جانب سے گیا ، وہ چومنے، چائے اور کہا اس کا کاٹنے لگا۔ اور اپنی زبان اس کے کان میں ڈال دی تب میں نے اس کا کرتا او پر آیا اور اپنے ہونٹ اس کے ان کے کندھوں پار کے لیئے میں نے امین کندتوں پرکا کا بھی اور اپنے دانتوں کے نشان اس کے کندھے پر چھوڑ دیئے ، جب میں یہ کرہاتھا اس نے مجھے میرے بالوں سے پکڑ لی اور اس کے کی یی کی یمانی کی
. او داده با جیسی آوازیں نکل رہی تھیں۔ اب میں نے کیا اور اس کا کرنا اس کے بروز میتک اوپر کر دیا۔ اس نے مجھے ایسا کرنے سے روکنا چاہا پر میں نے ایسا کر دیا اور اپنے ہونٹ اس کی خوبصورت ناف اور پیٹ پر کھ دیئے اور kiss کرلیا۔ میں kiss کرتے ہوئے اور چاٹتے ہوئے اوپر کی جانب اس کے موں تک جا پہنچا جو ایک سفید نیر میں چھپے ہوئے تھے، جو میرے انتظار میں سخت ہورہے تھے۔ میں نے اس کے ایک
مے کو دبایا اور دوسرے کو برا کے اوپر سے کسی kiss کرنے لگا اس دوران ہونیکی: نہیں نکل رہی تھی وہ میرے بالوں میں اپنی انگلیاں پھیر رہی تھی ۔ میں اپنا ہاتھ اس کی کمر کے پیچھے اس کے برائے بکری نے کیا اور انہیں کھولنے لگا، اس نے مزاحمت کی مگر میں نے تھوڑی کوشش سے اس کا برا کھول دیا۔ اب میں نے اس کا برا اس کے مموں سے ہٹا دیا ، اب اس کے سے تیار تھے میرے آنکھوں کے سامنے، مجھے انہیں چوسنا تھا، چلاتا تھا اور ہاں کھانا تھا۔ اور میں نے ایسا ہی کیا۔ اس کے لئے جلد ہی میری تھوک سے گیلے ہو چکے تھے ۔ اب مجھے محسوس ہورہا تھا کہ وہ بہت گرم ہو چکی ہے، اس کی سانسیں بہت تیز اور گرم تھیں اور دو اب کوئی مرا دوست نہیں کر رہی تھی ۔ اب میں نے اس کی ٹانگوں کے درمیان چلا گیا، اس کی بائیں ٹانگ اٹھائی اور اپنے کند لانے پر کھولی اور
گیا پائلوں کو چومنے لگا ، یہاں سے پوتے پھومتے میں اس کے پتوں کے درمیان چلا گیا اور پھر اس کے کپڑوں کی اندرونی جانب اور آخر میں اس کی پھدی کو kiss کرنے لگا اور وہ مزے میں کھا نے کی ۔ میں شلوار کے باہر سے ہی اس کی پھدی کو چوم اور پاٹ رہاتھا اور اس کی حالت غیر ہوئی جا رہی تھی۔ ایسا کیوں نہ ہونا، آخرکار یہ اس کی پہلی باتھی : ) اس کی اس حالت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے میں نے آہستہ سے اس کا ناڑا کھول دیا، اس کو اس بات کا پتہ ہی نہیں چلا اب میں نے اس کی پانی کا الاسک اور شلوار | ایک ساتھ اکھٹے کپڑے اور ایک ہی چونکہ میں اس کی ٹانگوں سے اتار دیئے۔ اس سے پہلے کہ وہ کوئی مزاحمت کرتی اس کا لباس اس کے وجود سے اتر چکا تھا اور ایک ڈھیر کی شکل میں فرش پر پڑا ہوا تھا، اس کی خوبصورت تان میں قدرتی لباس میں اب میرے سامنے نہیں ۔ اس نے کمرے کی مدد سے اپنا جسم چھپانا چا اور میں نہیں کرنے گی مگر اب اس کی کس نے من ہی میں نے بغیر ولی نوش لئے، اس کی چیخ و پکارنظر انداز کرتے ہوئے ان کے خوبصورت پٹوں کو چومنے لگا۔ میں نے اس کے ہاتھ نبوی سے پکڑ لئے کیوں کہ وہ اپنے ہاتھوں سے اپنی پھدی چھپارہی تھی، اب میں نے اس کی کمر پر چوما، اس کے دونوں ہاتھ پکڑ کے پڑے اس کے ممے چوسنے لگا انہیں کانٹے لگا۔ میں اب دو بار اس کی ٹانگوں کے درمیان چلا گیا اور اس کی پھدی کی خوشبووں کرتے ہوئے اس کی پھدی پر اپنے ہونٹ جا کر رکھ دیئے ۔ وھاب آرام سے لیٹی تھی ، میں نے اس کی پھدی کے گلابی ہونٹ کھولے، انہیں دیکھ اور ان پر اپنے ہونٹ رکھ دیئے ۔ وو و بادکا چنے گی اب میں نے اس کا کمرکو پکڑ لیا کہ اسے قابو کر کے رکھ سکوں ۔ اب میں اس کی پھدی چوس رہا تھا اور آہستہ آہستہ اپنی زبان اس کی پھدی کے اندر گھسادی ۔ وہ اب اس قدر دور سے سسکیاں لے رہی تھی کہ مجھے ڈر تھا کہیں میرے پڑوی ہی نھین لیں ۔ اس نے میرے بالوں میں اپنے ہاتھ ڈال دیئے ہے جیسے میں اسے آرام سے چوسنے لگا ۔ وہ اب بہت کی اور گرم ہو چکی تھی ، اب میں نے اسے بٹھایا اور اس کا کرنا اور پریز برا تار دیا۔ اب وہ میرے سامنے بالکل نگی لیٹی تھی ، اس نے کبھی نہیں پہن رکھا تھا سوائے اپنی چمکیلی سفید بالوں کے ، اب میں اس کے و پر بالکل اس پر الیٹ گیا اور اس کے ہونٹ چومنے لگا اور پھر اس کے ممے چوسنے لگا ۔ میر الوراچٹان کی طرح سخت ہور ہا تھا، میں اٹھا اور اس کی ٹانگوں کے درمیان بیٹھ گیا۔ میں نے پیٹ اورانڈروئیر اتارنے کے بعد گلے کا سراس کی پھدی کے سوراخ پر رکھا اور ہلکا سا جھٹکا لگا یا پہلی بار لوڑ اسلپ ہوگیا، میں نے شادی کو کہا کہ وہ اسے خوداپنے سوراخ میں ڈالے، اس نے میری بات مان لی اور کیلے کا سرد و بارها پی چند گی کے ہوٹوں پر رکھ دیا۔ اب میں نے جھٹکا مارا اور گلے کا ہر اندر چلا گیا۔ وہ درد سے چلائی .. اوووه نہیں ....... باہر نکال باہر کا اور میں مر جاؤں گی ... بہت درد ہورہا ہے۔ میں نے اس کے کندھے پڑے اور زور لگایا۔ اس نے مجھے ایک جانب والیانا چاہا مگر میں نے ایسا نہیں ہونے دیا۔ میں نے لوڑا پیچھے کیا اور ایک جانکاریابی آگے کی جانب ساران اندر چلا گیا، وہ کانپ رہی تھی اور رو رہی تھی ۔ نہیں نہیں پلی رگ جاؤ میں نے اس کی چیخ و پکارنظر انداز کر دی اور اگست ہو گیا تا کہ و تو را در برداشت کرنے لگے۔ جلد ہی وہ چپ ہوپھی تھی اور اس نے میرے کندھے اپنی خوبصورت بانہوں میں نیولی سے تمام کر سکتے تھے۔ اب میں نے آرام سے کوڑا باہر کی جانب نکالا اور پھر آرام سے آگے کیا ، جلد ہی میں ایک روم میں یہ کردیا تھا۔ اب اس کی تیز سانسیں اور بند آنکھوں سے محسوس ہورہا تھا کہ دو بھی یہ سب انجوائے کرتی ہے۔ اس نے اب اپنے بازو میری کمر
کے گرد لپیٹ رکھے تھے اور ہر ایک جھٹکے کے ساتھ وہ اپنے ناخن میری کمر میں گاڑ دیتی تھی ۔ میں نے اسے چوما اور اپنی سپیڈ پڑھا دی اور اب اسے زیادہ زور سے چودرہا تھا، زیادہ تیزی سے اس نے اپنی خوبصورت انکھیں میری کمرے کے گرد لپیٹ دیں اور اب وہ مجھے گرپ کر رہی تھی اور زور زور سے سسکیاں لے رہی تھی ، او و و و .... او و دو شی شی شی شی شی ی ی کی ہی میں نے اس کی ٹانگیں کندھوں کی جانب کہیں اور انھیں چومنے اور چاٹنے لگا اور اس کی پائلوں سے کھیلنے کا اس نے اپنا کہ چڑایا کہ میرے جھٹکے برداشت کر سکے جلد ہی اس کے ہاتھ میری کمر پر تھے، ناخن اندر رہتے ہوئے اور اس نے مجھے مزید اپنے اندر دھکیلئے
کے لئے ذور گانا شروع کر دیا۔ اس کی آنکھیں بند ہیں اور وہ بہت دور سے سسکیاں اور آہیں بھر رہی تھی، اب میں اسے پاگلوں کی طری پور ہا تھا اور جلد ہی اس کی پھدی میں بہت گہرائی میں فارغ ہونے لگا، میں جب اپنی منی اس کے اندر چھوڑ رہا تھا وہ بھی میرے ساتھ ساتھ فارغ ہورہی تھی ۔ اس کی پھدی میرا تمام منی چوس رہی تھی اور میں اس کے اوپر گر چکا تھا اور اس چومتے ہوئے میں اس کے اوپر سے ایک سائیڈ پر ہو گیا، اس دن میں نے 2 بار مزید اس کی گی اور وہ شام کوڈرہی تھی کہ ہمیں اسے بچہ ہی نہ ہو
ا
Read my all running stories

(ख़ौफ़ running) ......(फरेब running) ......(लव स्टोरी / राजवंश running) ...... (दस जनवरी की रात ) ...... ( गदरायी लड़कियाँ Running)...... (ओह माय फ़किंग गॉड running) ...... (कुमकुम complete)......


साधू सा आलाप कर लेता हूँ ,
मंदिर जाकर जाप भी कर लेता हूँ ..
मानव से देव ना बन जाऊं कहीं,,,,
बस यही सोचकर थोडा सा पाप भी कर लेता हूँ
(¨`·.·´¨) Always
`·.¸(¨`·.·´¨) Keep Loving &
(¨`·.·´¨)¸.·´ Keep Smiling !
`·.¸.·´ -- raj sharma

Post Reply