urdu font sexy stories

User avatar
rangila
Super member
Posts: 5586
Joined: 17 Aug 2015 16:50

urdu font sexy stories-6

Post by rangila »

urdu font sexy stories-6


دن
کی د ات کا
نام عابد شهر ضلع لیا۔ میر امام تاج ہے ۔ ام امیر آعات ایہ سے ہے۔ میاں Esc کر رہا ہوں ۔ میں ایسی کہانیاں بہت شوق سے سنتا ہوں ۔ اور

به ستواں آپ نے بات کی کہانیاں پڑھی اور میں جوان کی مے میں معلوم کی لوک کیانیان باستے میں وقت میں ہوئی ہے یا نہیں ۔ ان دوستوں نے جو کہانی میں آپ کو سنانے جا رہا ہوں ۔ ایک چاه اتحہ ہے۔ ام را کی کہانی میں جھوٹ کی بالکل بھی نجات میں ہے ۔ کہ کیانی اور کیا ایک سال پرانی ہے ۔ میر ایده است با کسی کا جامع تقان
ہے ۔ اورتال مه ره تان نے study کرتے تھے ۔ تما ثمر تھا ان کے اہم کی جایا کرتے تھے .December test پر تھے اور میں تیاری بھی بات کرتی تھیں ۔ لہذا میں مرنا ان کے گھر پلا دیا تا کہ تم دونوں ملی کمر، نے تیاری کریں ۔ ان دنوں عمر خان کے گھر والے شادی پر دوسرے کئے ہوئے تھے۔ عرفان papers کی مہ سے شادی نہیں کیا تھا ۔ میں مر خان کے کہ بیان کیا ۔ او را کئے ہیٹ کر اپنے ن ے باپ 1 : 15 ہے تم تم بنتے رہے اور پھر مر جان بول سے کھانا لے آیا اور تم دونوں مل کر امام کمایا۔ تم لوگ نے سے بہت تھک گئے تھے۔ ابتدا میں نے اور ان کو تمامی امورنی Refreshment :و یائے راو ک ے
Computer آن بیا اور پھر اس نے کپوائر Stage Daramna ای و یا تم لوگوں نے مور کی دامی در راهند و یا اس کے بعد مر فان اپنے کمرے میں کیا اور و پانی سے ایک کی ڈی نے آباد سے پایا
کہ بتایا کہ یہ Xxx کی ڈگی ب- 50 « فان xxx کی کیا کی اکا دکی او ر ام و و و بی کس XXXو پینے ک ا
پا تم تو ان کی سی ای او عر فان فون تے پا یا فون سننے کے بعد اس نے مجھے بتایا کہ مجھے ابھی پونال با او با میرے
ایک دوست کا accident :و کیا ہے ۔ اور یہ آپا انیت کی ضروری ہے ۔ اور ما و امریکی رو میں 2اد من بعد و پاس آ جاؤں گا۔ میں ڈرائنگ روم میں : پیماXXX و بی ریا تھا۔ عرفان نے ستر سالنا اور کسی کے بعد وہ ساتھ والے گھر تا یک مسائٹی کو کہ کیا کہ گھر کی حمائت کرم لڑکی کا نا مانا کہ تمھا۔ عرفان شما با کو بتایا سوال کیا کہ گھر میں میر اوه ت ی ہے ۔ ابا عرفان میرے پاس آئے بغیر مجھے بتانے بیٹھے کہ میں بچی کی رسائی کو گھر پرواز کم چار باتواں پایا گیا شامل کر لی اور ان گلی میں پیر کی ۔ کے بال بھی علم نہیں تھا کہ بابر ماله دیا ہے ۔ میں مزے سے اند ر مینار
قلم و کیا رہا تھا ا لم ا volumne را او نپا تھا۔ امام نے آواز سنی تو وہ آواز کے تعاقب می بینک کے اور ان سے ک یا گیا ۔ ہائے اک سے کرده اند را نیا ای Window سے اندر چھنا یا اور ان کے ، یا امیر امان monitor نی حرف تا او ره چWindow -لم. لیری ک ے
بال ہی میں پی اتنا کہا اب با سختی سے علم کی ریکی ہے ۔ موازی امی کے بعد اپا تمے کے بارے نبی کی آواز سنائی دی میں ڈر گیا اور گھبرا گیا کہ گھر میں کون ہے، میں اندر جن میں بانه با ایک لڑکی بھی تھی ۔ میں اس کے پاس آیا اور پوچھا کون ہوا تو اس نے بتایا کہ میں یرقان کی نہ سمائی ہوں اور قا ن نے مجھے گھر رہنے کے
نے کیا ہے ۔ آپ نے اپنا نام شمائلہ بتایا تو میں نے کیا کیا ہوا تھا بیان بھی ہیں ۔ تو اس نے کہا کہ میں یا تم مدرکی کی ام دریا خان میں دن کیا ب ائی سے میرے
منہ سے لی گئی تو میں نے کیا کیا برام سے با ر پانی پر پانی یا ان کی ہو یا عوام اپنے وکی نے اسی نے کہا کہ میں کیے جا سکتی ہوں میرے
پاؤں میں موت آئی ہوئی ہے ۔ اور میں پانا بھی نہیں سکتی تو میر ابیات نے بھی دو تین میں ٹی درمیان اس کو بانی را در Drawing room یا به علم و دینے کا میرے مال میں اس لڑکی کے لئے از رابر بھی feelings
میتی می من در این میان نہیں تھا کہ کسی کے ساتھ میں sex گروال میں اپنے خیالوں میں : یا عالم میں بانٹنا ۔ کی وز پی در پی آیا تم ماں نے جیب سے بات میں نی - هم آواز میں پیچھے کی جانب window کنی کرنے سے ہی کی شان ہے، بیکاتور
شما به خطر کی تھی ۔ میں شیر آیا شیر کے ہاتھ پاواں کان کے امام اپنے منہ سے بو sex آواز میں نکال رہی تھی ۔ کسی نے مجھے Xxx دیتے ہوئے کیا یا تھا ۔ ثمالہ نے کہا کہ کیا میں اندر جاؤں تو میں نے پاAs You wish تو و باد کا دور از locks ئے اندر ڈرائنگ روم میں نے میرے کہ تم ان میں بھی نہیں تھا کہ میں بھی کی لڑکی کے ساتھی نہ کر sexy فلم د پیسوں کا میرے ساتھی چین اور علم و دیتی رہی اور میں اسی کو دیا اور اس کا کیا تھا اس کی شلوار میں تھا۔ میں یہ کی کار اجرا کیا بولی میں آج تک یہ سب sexy films یو ماهاتما شتت شا ہی مرتا جاتا تھا۔ آپ کے شدت۔۔ یا ۔۔ اب بائی پاژ - في تواتر گرنگی گی - اپاتم
ک ن را در آیا تو اے این پیر کو دیا ہے اب موت اور ہم نے انا۔ تو برم ہو رہی تھی ۔ میں بھی ان تلی کی کی کو نہیں چودا تھا۔ مجھے ایہ و عمل یا کسی لڑکی کو چود کے کا۔ s0 ماں نے اسی کو کئے بنایا اور اس کی کمر پر ہاتھ ب نے گا۔ پھر میں نے اس کے بانوان با پ وشش کر رہے تھے جیب مادر در داخل ہوا۔ میں کیا پیا تے کی مانند کسی کے ہو تو ان کو پیا ر با هر بار اپنی زبان کی کے منہ میں کالونی سے اسے من و ، یا تھا۔ وہ اپنے ماننے سے ان کو بہا رہی تھی ۔ میں اتارا کی کم kiss ام دیا تھا ۔ اس کے بعد میں نے انا۔ نینا روتی ۔ جب میں نے ا نا ئی بھی اتاری اور میں کمی وانیل و خوار بچے ان روایا اور مجھے عرب با مزہ بھی آیا۔ اللہ کے skin boobs کی یہ کیا میں قید تھے ۔ اور ماند و امیر مرے رستے ، بائی پاتے تھے۔ 90 ثانی نے اک سکے کہ ان کی بات مولوی اور کپ کے boobs میر سے آزاد ہو گئے ۔ میں نے اب کے boobs ، لکھے تھے ان روا یا اس سے boobs کا سائز 34 تھا۔ تماما۔
نے یہ آیات و رشت تا ره شی او ر پر ان کو باتھی کے کمرے کے ا نمي - مثال کی بھی کوئی sex میں کیا تھا اور ان تھی کی مسرت سیر تا تھا اور بہت زیا دم کیا ہوا تھا۔ اسی کے قول کولی boobs کو دکھا کر میرے
منہ میں پانی یا سیب کے 5
bool کیا پیا سے کئی مسرت موٹی اور کسی کے ایک معمے کو منہ میں لے کر اپنے انجاب کے nipples boobs:بہت اٹھتے تھے یا سے پڑے میں nipple fight boob تومان می با امور کی وہ وح ی
کی امر ب نانا اور باتھ ، کسی کے اس معمے کو ا ام اسمائے گا۔ میں نے کب سے شے کے nipple کودا تو ان میں یا او را بنده پستہ کھائے جانے سے ایسا کرنے سے کسی کو پیاست ما و آیا۔ اسلامیہ کی مت ماری تھی ۔ تقر یبا10منت کے بعد میں نے اس کے boobs کا پابند یا ما را با نام تو بہت ہی زیبا hote ہو میں تم میں کام نہیں کروائی تو اس نے کہا کہ میں میں یہ کام ان پہلی مرتب کرتی ہوں ۔ یہ سب اس فلم کی منہ سے ہوا ہے ۔ جو کام وکیل رہے تھے جب میں نے علم کی وجہ سے ہائے کیا اور میں گرم ہونے کی ام میر ے پائوں میں کوئی وی میں آئی ہے تو مجھے اپنی طرف متوجہ کرنے کا کیا با دنیا به میان م جھے اپنے بار بھی میں کیا او را در را افالم. گنے کے کان بر متر باشد بیا و رئیس ادارة
گیا۔ اس کے بعد میں نے مانا کہ کیا کہ ایسا کرتے ہیں کہ ہدی ما چیمانعلم میں ہو رہا ہے تم لوله پ ی کر یں گے ۔ گا اس نے کیا پیام یا تو فلم میں کوتا کیا ہے کے ان کو منہ میں لے کر مندی کے بجائے کر رہی تھی ۔ سو بر پایه با او را کی یہ ان کو اپنے منہ میں
کے ایا م میر نے ان کو پیٹ میں ہی ان کوان بیٹے کا بہت ہی زیادہ تر دو کے بہت مزوار باشیا اور میرے منہ سے بان أدائر کی گل رسیتی تقربا ء نے ان کے پیر و ہمت کی اور میں قاری کو دیا تھا میں نے اپنی یا کسی کے نہ ہو گی اور ولی مین هو و پچر پر برم و پائی تھی ۔ اس کے بعد میں نے اس کی شلوار را تا روی او را پنی بھی اس کی pussy میں ڈال دی جانے کی کیا خیال کیا۔ جب میں
نے اس کی پھدی دیکھی واقع نکل رہا تھا کہ وہ پہلی مر تاپ Sex کررہی ہے تھوڑی دیر کے بعد میر ان پر بہت ہو گیا اور پھر سے میدانی کرنے کے لئے تیار تھا۔ میں نے ان کو تو نے سر اٹھایا اور اس کی ٹانگوں کو اپنے خاندانوں پر رکھا اور بات اس کی چندر گیم کھیر نے انکا اب کو بہت مزا آ رہا تھا۔ پھر میں نے است. سیستم ایمان اس کی پھدی میں ڈالنا شروع کیا تو اس کو یہ تو رو تو ، اور اس نے ہاتھ سے میر ان اپنی چدنی ست با جواب دیا ۔ میں نے اکی کو کیا کہ پہلی مر تپه و رو جو جا کر میں ہوتا ۔ میں نے پھر اس کی پیدی بانی رکھا اور زور سے ایک کی
گلے میں اپنا گر نے سے یا جان اس کی پھدی میں ڈال دیا اور آرام آرام سے اندر رہا جب اس نے اچا یا جا تا راب کے boobs اور دونوں کو یوم باتمة 16 مست چودنے کے بعد میں جاری ہو گیا اور میں نے اپنی نیکی کی پھدی کے اوپر کی پرواز و تی او را میں ثنا کا بھی مارتے ہو پائی تھی ۔ جب ہم فنا کرتے ہوئے تو دیکھا کہ ماما کی پھدی سے خون کلر با تمام میں نے بچے کی مدد سے ان کا خوانسان کیا اور آپ نے اپنے اور میں نے اپنے آپ سے بات کئے ۔ اب سے پدر و ما متن ما پا کر مدینہ کی اور میری بیوٹر shut ownء ک ے عدم سے پیر سیا بهار پورت با 1 : 30 منٹ کے بعد از تان با مد و پسر با مامان در پایانی به زنان سے کیا کو پاوای بار پانی میں نے عمر قا ان کو جو کچھ بھی ہوا تھا اسی کے بارے میں میں بتایا۔ ان کے دن میں نے عرفان کو سب پر بتما و با او ر مه ما باید اب بھی جاری ہے ۔ جب بھی ہم چاہتے ہیں ان میں اور عرفان بنانے کی ہو تے ہیں تقریبا ایک نلت کے بعد ہم دونوں
نما نہ ہو کر پو در میان یہ کہانی میں پیر کی آپ کو نا وا نا۔ دوستوں یہ ایک سچی کہانی تھی جو میرے ساتھ پی آئی امید ہے کہ آپ کو پسند آئی ہوئی اور کہانی میں کسی قسم کی کون های پولی و معافی کا خطا کار ہوں ۔ جو کوئی بھی مجھے ای میل کا نیا امیر ای لیس ہے۔

User avatar
rajsharma
Super member
Posts: 14434
Joined: 10 Oct 2014 07:07

Re: urdu font sexy stories-7

Post by rajsharma »

بانی لیکر حاضر خدمت
ہے
کی ہڑپ میں گلاب کا پھول توڑا اپنے دوستو mr
. muna @ yahoo کئی دنوں کی چھٹی کے بعد آپ کی خدمت میں بالکل ازی سب سے پہلے میں اردو بیان کی ، جب تم کو واپس آنے پر خوش آمدید کتابوں اور خوب صورت ویب سات بنانے پر مبارکباد پیش کرتا ہوں چند دن قبل مجھے اپنے دوستوں کے ساتھ ساری ول جانے کا اتفاق ہوامیرے ماموں سایول میں رہتے ہیں میں نے ان کے گھر میں رہائش اختیار کی بانی اور پلا ہور گئے ہوئے تھے ووون بعد ماموں ان کو لینے کیلئے لاہور چلے گئے باقی دوست اپنے اپنے رشتہ داروں کے گھر میں تھے ہم نے پروگرام بنا
کہ مہر پر دیکھا جائے سو ہم نے بس پڑی دور جڑ پہ کیلئے روانہ ہو گئے مٹھارولیس نے سار معزوثراب کر دیا صبح کے کھلے ہر پی کے آثارقد یہ دیکھتے ہوئے شام ہوگی ایک دیبانی نے بتایا کہ آخری بس روانہ ہونے والی ہے اس کے بعد رات میں جن بھوتوں کے ساتھ گزارنی پڑے گی اتفاق کی بات دیکھے کہ ترستی سکول کا بھی ایک دور وہاں پر آیا ہواتھا اور ان کی یہ خراب ہوئی تھی جس کی وجہ سے جس بھی پہنم سوار ہوئے اس میں خاصارش تمام پارووست نے مین ایک نشست پر بیٹھ گئے جب کی دو نشستوں ومل سیٹ پر میں کیا جا کر بیٹھ گیا شام کے اے وحمل رہے تھے بس روانہ ہونے کی گئی تھی کہ ایک نوجوان دیہاتی لڑکی ایک یا ہے کیسا تھا کنی و بابا اس کو سی پر چڑھانے کیلئے آیا تھالڑکی بس پر چھی اور بیٹے کیلئے جگہ تلاش کرنے لگی اتفاق سے صرف میرے ساتھ والی سیٹ خالی تھی جہاں وہ آ کر بیٹ گئی اس کے جسم کی خوشبو سے میرا انگ انگ مہک اٹھا بس روانہ ہوئی تو اندھیر اچھانا شروع ہوگیا تھا پر فی طرز کی سیکس کی اپنی صرف ایک لاٹھی بس کے اندر اندھیرا چھانا شروع ہوگیا مجھی دوڑ کی گویا ہوئی کہ اگر آپ کو تراش نہ ہو میں کھڑکی والی سائیڈ پر آ جاؤں میں چپ چاپ اپنی جگہ سے اٹی اور کھڑکی والی سیٹ اس کیلئے خالی کردی میں نے نوٹ کیا کہ دو چوری چوری میری طرف دیکھ رہی ہے اس کے بعد میں نے اس کے جسم کے نشیب وفراز کو جانچنا شروع کیا وہ کوئی میں سال کے تقریب کی عمر کی ہوئی اور پور دی بالی تھی بھرے بھرے ہویت کسی آگ کے انگارے کی طرح دمک رہے تھے جسم ٹھیک ٹھاک گوشت چڑھا ہواتھانگ قیمت میں اس کا کر بیان اور اسکے نے اک نی کہانی سنا رہے تھے میرے اندر بھی اک آگ لگنا شروع ہوئی اچانک کسی وجہ سے ڈرائیور نے بائیں طرف انتہائی تیز کی۔ سے موڑکا جس کی وجہ سے میں اپنا توازن برقرار نہ رکھ سکا اور لڑکی کے پیروں کی طرف گر نے لگا میں
نے خود کو سن بالا و پینے کیلئے اپنے ہاتھ پائے تو میری پوزیشن میں کہ ایک ہاتھ میر لڑکی کے دونوں رانوں کے درمیان اس کے علم کے قریب تھا جب کہ دوسرے ہاتھ سے میں نے لڑکی کے معے کو پکڑ رکھا تھا اور اٹھنے کیلئے جو میں نے زور لگایا تولڑ کی کاما مزید دب گیا اور اس کے منہ سے بے ساختدا وتی ماں کی آوازنکلی تب مجھے احساس ہوا کہ میں نے سیون ایم ایم کی بندوق کے رنگ کو پکڑا ہوا ہے میں نے فور اس کا نما چھوڑ دیا اور شرمندہ سا ہوئر مین کی ان کی کچھ نہ بولی اب بھی میں مل اند تیر اتحاد و من بعد
کسی نے میرا ہاتھ اپنی طرف محسوچا میں نے دیکھا تو لڑکی میرا ہاتھ اپنے سینے کی طرف سے جاری تھی مجھے اپنی طرف دیکھتے اگر دوسکراوی جواب میں میرے ہونٹ ہی نہیں میری روح تک مسکرادی اب میں لڑکی کے ممے دبا رہا تھا اور ایک ہاتھ سے اس کی پھدی کو دبا رہا تھا لڑکی نے احتی ها اپاد و پا چادری طرح اور دریا کی لذت سے دو چار سسکیاں لے رہی تھی میں نے اسکے ہاتھوں کو فارغ جانتے ہوئے اپنا آلہ اسکے ہاتھوں میں پکڑا دیا اور وہاں سے ملے گی جب میں اس کے ممے زور سے دیا جا و میر - آلہ اور بھی سختی سے پڑھی اب میں نے اس سے نگو شروع کی اس نے اپنانام امید تھی اور کہا کہ دو سی دل میں نرسنگ ہاسٹل میں رہتی ہے اوریز سنگ کی اس نے پڑھائی شروع کی ہے میں نے موقع کو غنیمت جانتے ہوئے اس کو رات اپنے ساتھ رہنے کی پیش کش کی جو اس نے تھوڑی دیر بعد سوچنے کے بعد قبول کرلی اب میں نے اپنے دوستوں سے جدا ہونے کا پروگرام بناتے ہوئے اسے سمجھا دیا کہ دو بس سے اتر کر ایک سائیڈ پر کھڑی ہوکر میرا انتظار کرے اس نے ایانی کیا دوستوں سے جد اہوئر میں
نے کش لیا اور ہم دنوں ایک ساتھ بیٹھ کر گھر گئے گھرچ کر سب سے پہلے ہم نے کھانا کھایا اور ڈبل بیڈ پر بیٹھ کر ٹی وی دیکھنے لگے اب سائٹ میں نے اس کو غور سے دیکھانا ہی بہت خوبصورت تھی اس کے میں آتش غضب کے تھے اس نے مجھے اپنی طرف گورتا دیکھ کر پوچھا کیا دیکھ رہے ہو میں نے جواب دیا کہ ایک گلاب کے پھول کو جو انسانی شکل میں دنیا میں آ گیا ہے اس پر دوستی گئی اور بولی گلاب کے پھول کو صرف دیکھتے ہی رہوگے یا پھر تو ڑو گے بھی میں نے جواب دیا کہ اگر تو ڑ دیا تو مر جھاجائے گا اس
نے ابا کی خوشبو تو آئے گی ابھی ہم بات کر رہے تھے کہ اچانک نارمووی پر انگلش فلم Xxx کاٹریلر پا ناہید نے پوچھا کہ xxx تو گندی فلم ہے میں نے بانہیں پیتا نند فلم ہے اس نے مجھ سے با ک نہیں۔ نائٹ آتی ہے میں نے ہاں کے جواب میں ہر بلایا ترا ہیر بولی کے مجھ سے نائٹ کر کے دکھاؤ میں نے اٹھ کر کمرے کی لائٹ بندی اور کہا کہ مجھے اندھیرے میں قائم کرنے میں مزہ آتا ہے اور یہ بول کر میں نے بیڈ پر اس کے اوپر چھلانگ کھائی مجھے اس وقت حیرت کا شدید جھٹکا لگا جب ویلی کی سے تیزی
سے بیٹ سے نکل کر غائب ہوگی اور میں بیڈ پر پڑاتھا ہید نے بیڈ سے اترتے ہوئے والیس بیڈ پر آئی اور مجھے اوپر سے کس لیا اب اس کی پھدی میری ہپ پڑھی اور اسکے سے میری کمر کے ساتھ لگے ہوئے تھے اور وہ میرے اوپر مزے سے بھی ہوتی تھی میں نے اس کی گردن کو اپنی انگوں سے نیچے کی طرف حیا اس اچانک وار سے وہ الٹ کر پر کی طرف جا گری اب میں اس کے اوپر تھا اور وہ میرے بچے یہاں میں نے عقل مندی کی اور بجائے اس کے بازو پکڑنے کے میں نے اس کی گانڈ پر بیٹھے بیٹھے نچے ہاتھ ڈال کر اس کے دونوں نے پکڑ لیے اور زور زور سے دبانے لگے ماہید نے نیچے سے نکلنے کی بھر پور کوشش کی مگر میں نے اس کی ایک نہ چلتے ہی اس کی نیچے سے نکلنے کی کوشش میر ے ا ے
(ن) کو نمبر پر رمز و د ے
رہی تھی اور وہ شیر کی طرح اکڑ کر کھڑا ہوگیا تھا اور یہ بات نا ہید نے بھی محسوں کر ہاتھی اس نے اپن کام کو اسے حرکت دی کہ میر ان اس کی گانڈ کے دونوں حصوں کے درمیان میں فٹ ہوگیا اب میں نے ماہی پر چمکتے ہوئے اس کی گردن سے بال بنا کر اسے چومنا شروع کر دیا وومنٹ کے بعد جب میری گرفت ڈھیلی ہوئی تابیر نے موقع پر فائدہ اٹھاتے ہوئے مجھے بتا دیا اور مجھ پر چڑھ کر بیٹھے گی اب وہ میرے آنے کے اور دینی تھی اور میں اس کے اگلے قدم کے بارے میں سوچ ہی رہا تھاکہ اس نے ان میں اتار دی اور ساتھی میرے یمن کی طرف ہاتھ بڑھایا میں نے کسی مشین کی طرح اس کا آرڈر مانتے ہوئے اپنی تمش اور کو اٹھتے ہوئے انا ردی میں نے ہاتھ بڑھا کر پیچھے سے ہی کا د اولا تو دوسفید دودھ جینے رک گئے میرے سامنے آ گئے میں ناہید کے حسین مموں کو دیکھتے ہی ان پر ٹوٹ پ اور بہنوں سے چومنا شروع کر دیا مگر ماہید کی اور موڈ میں تھی اس نے مجھے پیچھے کی طرف
کیلتے ہوئے اپنے ہونٹ میرے ہونوں پر رکھ دینے اور کسنگ شروع کر دی اس کی سانسوں سے ایک آگے نکل رہی تھی میں نے اس کی سند کا بھر پور جواب دیا اب بھی نا ہید اور اور میں نے بھی میں اوپر اور وہ اس کھیل میں امن و با اب میں نے آخری شاٹ کھیل کا فیصلہ کیا میں نے اپنی شلوار با ردی۔ اور ہی کی اور بھی بھیج دیا ہید نے میرے مردوں کو بھانپتے ہوئے اپنی شلوار جو میں نے ہی بچے کی تھی پوری اما روی اب میں چوتھا برا نہیں اور میں نے اپنا آلہ ماہید کے نام کے اوپر فت کیا ہیں
نے اپنی تم اس پر رگڑنی شروع کردیا ہی کی ستم کی ملکی گیلی تھی ان کیامز و تا کنواری لڑکی کے بونت میرے ہونٹوں کو چوم رہے تھے اس کے خوبصورت پستان میرے سینے پر تمغوں کیطرح پڑے میری۔ برادری کو خراج تحسین پیش کررہے تھے اس کا عملی بدن میرے جسم پرتھا اس کی ستم میرے آنے کو سلائی دے رہی تھی اب ماہیر پوری طرح سے تیاھی میں نے اس کونستر پر لٹایا اور اس کے پیٹ کے بین دو یکی دیگر اس کی ہپ کو دور کر دیا اب اس کی ستم بالکل میرے ان کے سامنے تھی میں نے آہستہ
سے اپنالت اس کی چدی (شلم) کے پاس لے گیا اور اندر کی طرف دھکیلنا شروع کیا اور آرام سے امیر بولی میں نے ماہید کی ستم کی پٹائی کا فائدہ اٹھاتے ہو ان کو تھوڑا سا زور لگایا اس نے آگے جانے سے انکار کر دیا اور بتا دیا کہ آگے رکاوٹ کھڑی ہے میں نے رکاوٹ کوتوڑنے کا فیصلہ کرتے ہوئے اپنا لن باہر کی طرف نکالا تو ا ہی تڑپ تھی اور بولی باہر کیوں نکالی یامیں نے اسے بتایا کہ اب گلاب کے پھول سے اس کی خوشبو چھانے لگا ہوں اس نے کہا کہ میں تیا رہوں میں نے ماہی کی ستم پر اینان رکھا اور ناہید کے مے نیچے سے پکڑتے ہوئے پوراز در اندر کی طرف لگادیا ایک لمحے کی بہ یک
کے بعد میر ان آ گ کی ایک وادی میں اتر گیا اور میرے نیچے تابید کی چیخیں نکل گئیں اس نے بہلتے اور مجھے مارنے کی کوشش کی مگر میں نے مضبوطی سے اسے پکڑے رکھا منٹ میں رکار اس کے بعد میں نے ہلکے ہلکے سے ملنا شروع کیا کچھ دیر کے بعد اہیر نے بھی نیچے سے ہلانا شروع کر دیا اب اس کو مزہ آ رہا تھا پانچ منٹ کی شان اور ان کے بعد وہ اس نے مجھے روکا اور باتھ روم چلی گئی میں نے اس
کے جانے کے بعد چادر دیکھیں جو خون سے بھری پڑی تھی میں نے چادر کو اٹھایا اور ایک سائیڈ پر رکودیا اور بستر پر لیٹ گیا ہیر آئی اس کا نگا جسم کی کوٹھی گرم کر دینے کیلئے کافی تھانا ہیدا تے ہی میرے اوپر چڑھ کر بیٹھ گئی اور میر الہ اپنی ستم کے نیچے رکھا اور اوپر نیچے ہونے لگی پھر ہم نے ویں منٹ میں مختلف سٹائل بدلے اس دوران اس نے دوبا رک کر آرام کیا جس کا مطلب میں مجھے کیا اب میرے آنے نے ریڈنگ وید یا میں نے ماہید کو نچایا اور اس کی انگیں اٹھا کر زور زور سے میں شاندار جھکے لگائے۔ ایک دو تین پاناچ اٹھارہ انیس ہیں اور میں نے اپنا آلہ نکالا اور اس کے پیٹ کی طرف کر کے ساری منی نکال ویاہید نے بی بی سانسیں لینا شروع کردیں کچھ دیر بعد ہم نے اکٹھے باتھ روم میں جا کر بلی اور سوگن کی بی بی ناموں کا فون آ گیا انہوں نے حال احوال پوچھنے کے بد تا که و و ون اور لاہور میں رکھیں گے اور میں واپس نہ جاؤں اور سای وال میں ہی ان کی واپسی تک ر ہوں میں
نے یہ بات نا ہید کو بتائی تو وہ خوشی سے اچھل پڑی اور اس نے مجھے گلے لگا کر میرے بہنوں سیکس کیا اس نے وہیں سے اپنی ایک دوست کو فون کر کے دو دن کی چھٹی لے لی و دوووون اور دور میں ہم نے ہر منٹ اور ہر پل کو انجوائے کیا جب میں نا ہید کو ہال چھوڑنے گیا تو اس کی آنکھوں میں آنسو بھی گر میں نے اس کے جذبات کا اندازہ لگایا کہ ہم لوگ مسافر ایک جگہ تارا ٹھکا نہیں میری رانگارے آپ اپنی میلر
Read my all running stories

(ख़ौफ़ running) ......(फरेब running) ......(लव स्टोरी / राजवंश running) ...... (दस जनवरी की रात ) ...... ( गदरायी लड़कियाँ Running)...... (ओह माय फ़किंग गॉड running) ...... (कुमकुम complete)......


साधू सा आलाप कर लेता हूँ ,
मंदिर जाकर जाप भी कर लेता हूँ ..
मानव से देव ना बन जाऊं कहीं,,,,
बस यही सोचकर थोडा सा पाप भी कर लेता हूँ
(¨`·.·´¨) Always
`·.¸(¨`·.·´¨) Keep Loving &
(¨`·.·´¨)¸.·´ Keep Smiling !
`·.¸.·´ -- raj sharma

User avatar
rajsharma
Super member
Posts: 14434
Joined: 10 Oct 2014 07:07

Re: urdu font sexy stories-8

Post by rajsharma »

میری بیوی 15 دن کے لئے اپنے میگی ہوئی میں بچیوں کو ہرسال تھیال لے جایا کرتی تھی۔ اس لئے ہمیشہ سے ایک کا بندھا ملا ہم جب بچے اور میری بیوی گھر نہیں ہونے کی رات دیر گئے تک ٹی وی دیکھتا رہتا اور ان کی تھوڑی پی لیتا۔ پھرسوجات الشمال بج اٹھ کے چائے بناتا اور آفس چلا جاتا۔ میری اور اتوار ک میں گھر کے اہم کام کیا کرتا اور دوران کارت اس پار تک ان چیزوں کو بھی ان خراب ہوں ۔ ایک یہ معمول سے ہٹ کر میں نے خواب دیکھا کہ میں نے ایک اجنبی عورت کے ساتھ سیکس کیا ہے اور نتیجہ نکلا کہ جب میں جاگا تو میران تنا ہوا تھا۔ میں نے چھوٹا پیشاب کیا اور کچن میں چل کے چائے بنانے گا۔ یہ اتوار کا دن تھا، میں صحن میں چار پائی پر بیٹھا سوچ رہا تھا کہ آج مٹھ مار کے اپنے اندر جوستی اور ہوشیاری چھائی ہے باہرنکال ہوں ، شاید مجھے کوئی ٹرپل ایکس دینا پارت کا ایک ٹرپل ایکس میں اور میری بیوی دو مہینے بنائے تھے۔
) کو وقت تھالہذا میرا خیال تھا کہ کیا تم کیا، اس وقت نہیں ہوں گی، میں نے ڈریلا اسے فلم ڈھونڈنے کے بعد وی میڈیا) لگائی۔ ہماری ٹی وی میچ میں ہاں میں ن ے
اپنی پسندیدہ کردی جس کی کر دروازے کھایا اور سامنے کی سائیڈ کھڑکی کیلیے
بھی فلم دیکھنے کا نام میں تین چار بات کا ایک عورت کی کی طرح کھڑی ہوئی ہے اور اور پنکھے سے ایک بہت بڑے انداز میں چود رہا ہے۔ میں فلم دیکھنے میں مٹھ مار بازار گرم ہورہاتھا کہ ہمارے گھر کے مین گیٹ پر بیک ہوئی ۔ میں اس فورا افراد پرگھبرا گیا اور جلدی سے اپان کپڑوں میں کورکیا، پاگلوں کی طرح ریموٹ اٹھا کے قلم بند کی شکر ہے کہ میں نے آواز بند کر رہی تھی ۔ اپنے اوپر قابو پاتے ہوئے میں نے دروازے
میں سے جھانکا تو میں اپنی بھابھی یا میمن کو وہاں کھڑا | دیکھ کے حیران رہ گیا۔ میں نے درواز کیا اور پوچھا خیر میں آج آپ ان منی من؟ وجہ یہ کہ آپ کے بھائی تین دنوں کے
کاش سے باہر کام کے لئے گئے ہوئے ہیں اور پانی پھیل چکا ہے۔ پانی لیک ہور ہا ہے ایکا گرو ٹھیک کر دیں تو؟“ میر تر اور کوئی راہ نہیں کی اور مجھے مجبور اس کے مر جانا پڑتا تھا۔ میں نے اسے اندر بلایا کہ آپ وی پی اتنی دیر میں
Read my all running stories

(ख़ौफ़ running) ......(फरेब running) ......(लव स्टोरी / राजवंश running) ...... (दस जनवरी की रात ) ...... ( गदरायी लड़कियाँ Running)...... (ओह माय फ़किंग गॉड running) ...... (कुमकुम complete)......


साधू सा आलाप कर लेता हूँ ,
मंदिर जाकर जाप भी कर लेता हूँ ..
मानव से देव ना बन जाऊं कहीं,,,,
बस यही सोचकर थोडा सा पाप भी कर लेता हूँ
(¨`·.·´¨) Always
`·.¸(¨`·.·´¨) Keep Loving &
(¨`·.·´¨)¸.·´ Keep Smiling !
`·.¸.·´ -- raj sharma

User avatar
rajsharma
Super member
Posts: 14434
Joined: 10 Oct 2014 07:07

Re: urdu font sexy stories

Post by rajsharma »

میران دوبارہ سے ملنے کا اور مجھے اس وقت ایک اور مسئلے کا احساس ہوا میں اب تک اپنے زمانے کے کپڑوں میں تھا اور مجھے لگ
جاتا ہے سامنے سے بند ہونے والا یا ان کے وجود سے اتر کے گر جائے گا۔ میں نے کیا اور یہ پہلے ہی اتار کھاتھ اور مجھے رات کے میر استان نہیں پھر سے ہی سامنے کیلیے میں نے دونوں جانب سے تھوڑا پر ان کا اولین کو رگڑا جب میں یہ
کر رہا تھاتون نے کن اکھیوں سے یا مین کی جانب دیکی و یا فلم دیکھنے میں مگن تھی مگر وہ بے خیالی میں نا دیدی پا یا ہاتھ رگڑ رہی تھی ۔ میں نے ک ہا کہ اس کی نپلیں تخت ہورہی ہیں اور ا من کے پتے میٹریل میں سے نظر آرہی ہیں ح دوران سکرین پر موجود شورت کی نیک خاک یمینگ ہورہی تھی اور اس سے ایک زور دارطریقے سے چوت ماری جاری تھی۔ مجھے ہمیشہ سے ہی جب عورت بہت زور سے چوری ہو اس کے لئے ہوئے تھے اس لیے بہت اچھے لگتے ہیں ۔ جب میں اس ایکشن کو دیکھ رہاتھا مجھے احساس ہوا کہ میں اپنا رگڑ رہا ہوں اور یہ کرتے ہوئے میری روب سامنے سے ملی ہوئی ہے اور میر اتنتان
صاف نظر آ رہا ہے۔ میر کے امین کی جانب دیکھا تو و کاو پر پیچھے ایک لیٹی ہوئی تھی اور اس نے ان میں کا کیا نہیں کھول رکھا تھا اس وجہ سے اس سے اور امی کے بریزر میں چھے ہوئے موں تک سارے نا رہاتھا۔ اس کے برٹیز کا ایک ایک کام کی ہوئ تھی اور وہ اپنے سے کیا ان کی تو اس نے میری جانب دیکھا تو اس ایک مسکرائی اور بول کہ کر بھی فلم دیکھتے ہو موت انگی رہا ہے تو جو میرے بھی چاہے کروں کیوں کہ وہ پرانہیں منائے گی اور میں بھی وہ کر رہی ہوں جو مجھے اچھا لگ رہا ہے۔ میں اسے کہا کہ میں بالکل برانہیں مناؤں کا وہ جو کرنا چاہے کرسکتی ہے۔ اس دوران فلم میں چودنے والے مرد نے بہت کی منی اس
عورت کی کمر پر چھوڑ دی تھی اور اب اگلے سیشن کا آغاز ہوا جس میں دولڑکیاں ایک دوسرے کو چوم رہی تھیں ۔ اس سے مجھے مزید ہوشیاری آئی کیوں کہ مجھے ہمیشہ سے دور کا ایک دوسرے کے ساتھ ایسا کرتے ہوئے اور کام بھی ملتی ہیں ۔ میں نے اینان رکھ اور یہاں سے چلانا شروع کیا اور پاسباں اس کی تمام کھول دیا اب میران واضح نظر آرہاتھا عن امین کی جانب کی وہ اپنے میں ایک اور ٹن کھول چکی تھی اور اب ایک بار کھان ے کے کے ساتھ کھیل رہی تھی۔ اس لی کرانے کی کو دیکھنا اور اس کے بھی ک وئی بلی ہے وہ اپنی انگلیوں میں لے کے رومی نے میرے لئے بہت مشکل بنا دیا میں آپ کو کنٹرول کرتا اور میں ان کے سامنے ہی فارغ نہ ہو جاتا۔ وہ میری جاتی ہے۔ میری تھی اور مسکرا کے بولی: "مجھے تہران ایک اچھا لگتا ہے وہ مزید بولی ، یہ بہت بڑا ہے، پہلے مجھے لگتا تھا کہ مینہ نے مجھے جو بتایا مذاق تھا مگر میں تمہارا تو بہت بڑا ہے ثمین میری بیوی اور اس کی بہن ہے۔ ہم دونوں بھائیوں کی شادی ایک ہی گھر میں ہوئی ہوئی ہے۔ اب ایا میں میری سالی بھی ہے اور بھابھی بھی ہے۔
Read my all running stories

(ख़ौफ़ running) ......(फरेब running) ......(लव स्टोरी / राजवंश running) ...... (दस जनवरी की रात ) ...... ( गदरायी लड़कियाँ Running)...... (ओह माय फ़किंग गॉड running) ...... (कुमकुम complete)......


साधू सा आलाप कर लेता हूँ ,
मंदिर जाकर जाप भी कर लेता हूँ ..
मानव से देव ना बन जाऊं कहीं,,,,
बस यही सोचकर थोडा सा पाप भी कर लेता हूँ
(¨`·.·´¨) Always
`·.¸(¨`·.·´¨) Keep Loving &
(¨`·.·´¨)¸.·´ Keep Smiling !
`·.¸.·´ -- raj sharma

User avatar
rajsharma
Super member
Posts: 14434
Joined: 10 Oct 2014 07:07

Re: urdu font sexy stories

Post by rajsharma »

مجھے تمہارے مے دیکھنا بہت اچھالنا ہے اگر تم بران مناؤ تو میں ان دونوں کو دیکھنا چاہتا ہوں۔ میں نے جواب دیا۔" چی بگرتم میں دیکھنا چاہتے ہو؟“ وہ بولی ۔ میں نے نبی کریم میں کئی سالوں سے تمہارے سے دیکھنا پر راجا، کیوں کہ ایک بار میں نے نور
کی تھی جس میں میں نے تمہیں نا ویکھ اٹھا کر میں نے سوچاتھا کہ ا بھی بھی ممکن نہیں ہوتھ کا انتم چپ ہوگیا اور اپنی خواہشوں کا مواد یا ین کے وہ آگے کو بھی اور اپنے برا
کھول دیا اور میں اس کے بر نیز میں پی پی نے واضح طور پر دیکھ سکتا تھا۔ اب ان سے آزاد تھے۔ وہ، وہ سب کچھ تھے جینے ک ے خواب دیکھا تھا اور شاید اس سے بھی زیادہ اس کی فل گول نہیں سخت تھیں اور اوپر اٹھی ہوئی اور بھری ہوئی تھیں حالانکہ اس کے دو رہی تھی ۔ میں اپنے سے
بنے ہوئے ان کی مٹھ مار ہاتھ اور وہ اپنی پلوں کے ساتھ کھیل رہی تھی ، ایک ہاتھ سے وہ اپنے موں کو چھیڑ رہی تھی اور دوسرا ہاتھ انکی شلوار میں چھپی ہوئی چوت پر چکا تھا۔ اس نے اپنی شلوار پینچ کر کے اپنی بیٹی سائیڈ پرکر دی تھی اور اپنی چوت میں دو انگلیاں تیل کی اپنی کالی چوت کو جس پتھوڑے تھو تی تھی انھی کرتی تھی۔ میرے احساسات ان کا بیان میں یہ میری زندگی میں پہلے والا جب میں ایک عورت کو مٹھ مارتے ہو کے گھر ماتھا۔ میں نے اسے کہا اگرتم ایسا کرتی ہیں میں بہت جلد فارغ ہو جاؤں کا دور می ماند پھیلا دوں گا ۔ تھوڑا اس کا پی اور پیروی میں مزید زور سے انگی کر نے کی جس کا نہ ہونے کے مزید قریب ہو گیا مزایا وہ بولی۔
Read my all running stories

(ख़ौफ़ running) ......(फरेब running) ......(लव स्टोरी / राजवंश running) ...... (दस जनवरी की रात ) ...... ( गदरायी लड़कियाँ Running)...... (ओह माय फ़किंग गॉड running) ...... (कुमकुम complete)......


साधू सा आलाप कर लेता हूँ ,
मंदिर जाकर जाप भी कर लेता हूँ ..
मानव से देव ना बन जाऊं कहीं,,,,
बस यही सोचकर थोडा सा पाप भी कर लेता हूँ
(¨`·.·´¨) Always
`·.¸(¨`·.·´¨) Keep Loving &
(¨`·.·´¨)¸.·´ Keep Smiling !
`·.¸.·´ -- raj sharma

Post Reply